ہوم / خصوصی رپورٹ / آئی ایم ایف پاکستان سے کیا چاہتا ہے؟

آئی ایم ایف پاکستان سے کیا چاہتا ہے؟

اسلام آباد:پاکستان اور آئی ایم ایف کے مذاکرات کو کسی حد تک کامیاب قرار دیارہا ہے۔ آئی ایم ایف پاکستان سے چاہتا کیا ہے۔ پاکستان اور آئی ایم ایف ایک پروگرام پر متفق ہوچکے ہیں۔ اس سلسلے میں رواں بجٹ کا انتظار کیا جائے گا۔تاہم دونوں کے درمیان جو معاہدہ طے پایا ہے اس کی مزید تفصیلات ابھی منظر عام پرنہیںآئی ہیں کیونکہ معاہدے پر دستخط ہونے سے قبل تک ان کو خفیہ رکھا جارہا ہے۔آئندہ بجٹ میں آئی ایم ایف کے مطالبے پر زیادہ تر اقدامات کیے جائیں گے ۔معاہدے کی تفصیلات اسے حتمی شکل دینے سے قبل عوام کے سامنے نہیں لائی جائیں گی۔ آئی ایم ایف نے شرح پالیسی، ڈالر کے مقابلے میں روپے کی قیمت اور ایف بی آر کے ٹیکس جمع کرنے کے ہدف پر سخت اقدامات کا کہا ہے۔آ ئندہ بجٹ کے لیے ریونیو اکٹھا کرنے کا ہدف آئی ایم ایف طے کرے گا جو کہ 4اعشاریہ7ٹریلین روپے سے زائد ہوسکتا ہے۔مزید توازن جو کہ سٹیٹ بینک کی شرح پالیسی اور شرح تبادلہ میں کمی پر بھی کام کیا جائے گا۔پاکستان نے معاہدے سے قبل سرکاری اداروں کو دی جانے والی سبسڈی ختم کرنے کی بھی منصوبہ بندی کرلی ہے اور اس سے متعلق باتوں پر آئی ایم ایف ٹیم کے ساتھ ہونے والے مذاکرات میں اتفاق ہوچکا ہے۔

Check Also

اپوزیشن آئی ایم ایف ڈیل کے حوالے سے تفصیلات جاننے کی خواہاں

اسلام آباد:اپوزیشن جماعتیں عمران خان سے آئی ایم ایف ڈیل کی تفصیلات جاننے کی خواہاں …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے