تنگ ملبوسات کا استعمال جلدی بیماریوں کا باعث

ملبوسات جلدی بیماریوں کا باعث ہوتے ہیں۔ تنگ ملبوسات کی وجہ سے ہوا ہماری جلد تک نہیں پہنچ سکتی، موسم گرما میں پسینہ آنے کے بعد ایسے ملبوسات کی وجہ سے جلد پر جراثیم کی پرورش کیلئے ماحول بہت سازگار ہوتا ہے اور وہ تیزی سے پرورش پاتے ہیں۔ جلدی بیماریوں پھیلانے والی فنجائی اس موسم میں عام ہوتی ہے جو پبلک مقامات پر چلنے پھرنے سے یا لوگوں کے ساتھ ملنے جلنے سے آپ کے ہاتھوں کے ذریعے کپڑوں اور جلد تک پہنچائی جاتی ہے۔ یہی فنجائی ہی متعدد جلدی بیماریوں کا باعث بنتی ہے۔ سردیوں میں بھی تنگ ملبوسات کا استعمال نقصان دہ ہوتا ہے کیونکہ اکثر ایک سوٹ کو دو یا تین دن تک استعمال کیا جاتا ہے جبکہ اوپر گرم سویٹر یا جرسی وغیرہ کے استعمال کے بعد سرد موسم میں بھی جراثیم یہاں آسانی سے پرورش پا سکتے ہیں۔ بہت زیادہ فٹنگ والے ملبوسات کی وجہ سے کمر کی ہڈی میں بھی تکلیف کا مسئلہ سامنے آ سکتا ہے۔ اگر آپ کی شرٹ کمر سے بہت تنگ ہو تو آپ ریلیکس ہو کر نہیں بیٹھ پائیں گی اور مسلسل اسی پوزیشن میں بیٹھنے سے کمر کی تکلیف شروع ہو سکتی ہے۔ تنگ ملبوسات کے علاوہ تنگ زیر جامے بھی جلدی بیماریوں اور کینسر کا باعث بن سکتے ہیں۔ ایسے ملبوسات فضا میں موجود گرد و غبار کو بھی جلدی جذب کرتے ہیں اور اس وجہ سے بھی سکن انفیکشنز ہونے کا خطرہ رہتا ہے۔ ماہرین کے مطابق جلدی بیماریوں سے بچاﺅ کیلئے کھلے اور ڈھیلے ڈھالے ملبوسات پہننے چاہئیں، ہلکے رنگوں اور قدرتی ریشوں سے تیار کردہ ملبوسات بھی جلد کیلئے مسائل پیدا نہیں کرتے، اس لئے اگر آپ کی جلد حساس ہے تو تیز شوخ رنگوں، مصنوعی ریشوں سے تیار کردہ اور تنگ ملبوسات کا استعمال ترک کر دیں۔




Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *