ڈونلڈ ٹرمپ کا عہدہ سنبھالتے ہی 30 لاکھ غیرملکیوں کو امریکا سے نکالنے کا اعلان

653232-trump-1479057888-214-640x480نیویارک: نومنتخب امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے اعلان کیا ہے کہ وہ عہدہ سنبھالتے ہی غیرقانونی طور پر ملک میں مقیم 30 لاکھ افراد کو ملک بدر کردیں گے۔
غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق امریکا کے 45ویں نومنتخب صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے صدر منتخب ہونے کے بعد اپنے پہلے انٹرویو میں کہا کہ عہدہ سنبھالنے کے بعد سب سے پہلے ملک میں قیام پذیر جرائم پیشہ افراد، تخریب کاروں، منشیات فروشوں اور اس قسم کے تقریباً 20 لاکھ لوگوں کو ملک سے نکالا جائے گا اور یہ تعداد 30 لاکھ بھی ہوسکتی ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ ایسے غیر ملکی افراد کو ملک میں نہیں رکھا جائے گا اور ممکن ہے کہ جرائم میں ملوث افراد کو جیل میں بھی قید بھی کیا جاسکتا ہے۔
اس خبر کو بھی پڑھیں: ڈونلڈ ٹرمپ کی صدارتی مدت کے ابتدائی 100 روز کا ایجنڈا
نومنتخب صدر نے اپنے انتخابی منشور میں شامل ایک اور وعدے کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ میکسکو کے ساتھ سرحد پر باڑ لگانے کا معاملہ بھی زیر غور آئے گا لیکن یہ ضروری نہیں کہ ساری سرحد پر باڑ لگائی جائے تاہم بعض مقامات پر باڑ لگائی جاسکتی ہے اور میکسکو کی سرحد پر دیوار بنانے کو ضروری سمجھتے ہیں۔
اس خبر کو بھی پڑھیں: نو منتخب امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے مسلمانوں سے متعلق متعصبانہ خیالات
واضح رہے کہ 9 نومبر کو ہونے والے صدارتی انتخاب میں ریپبلکن پارٹی سے تعلق رکھنے والے ڈونلڈ ٹرمپ نے اپنی مخالف جماعت ڈیموکریٹک پارٹی کی امیدوار ہیلری کلنٹن کو حیران کن طور پر شکست دی تھی اوراب وہ امریکی قانون کے تحت 20 جنوری کو اپنے عہدے کا حلف اٹھائیں گے۔




Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *