anees-farooqi

کالی رات ، کالی سڑک ، کالا برقعہ

اندھیری سیاہ رات میں ، سیاہ تارکول پر کالا برقعہ ۔۔ آخر یہ معمہ کیا ہے ؟ ۔۔۔ اس کا ذکر بھی تھوڑی دیر میں کرتے ہیں ۔۔کچھ بات ہو جائے حالاتِ حاضرہ کی ۔۔۔ملکی و غیر ملکی صورتحال میں بہت کچھ رونما ہوا ۔۔۔آج کچھ شہر ٹورونٹو میں منعقد ہونے والے ایسے ایونٹس کا ذکر بھی ہو گا جن کا ذکر شاید کسی اخبار یا ٹی وی والے نہ کر پائیں ۔

امریکہ میں ٹرمپ کا پتہ ۔۔۔ پاکستان میں مشرف کا چوکا چھکا ۔۔ اور کینیڈا میں علامہ اقبال کے جوانوں کی اونچی پرواز ۔۔لیکن پہلے ذکر ہوگا ایک معروف جیالے کا ۔۔۔ دوستوں کے دوست ۔۔ بھٹو سے لے کر بینظیر تک کے دستِ راست ۔۔ اور پی پی پی کے مرکزی رہنما جہانگیر بدر وفات پا گئے ۔

پیپلز پارٹی کے دوستوں سے معذرت کے ساتھ ۔۔۔ بھٹو کا نعرہ زندہ ہے پر بھٹو شہید ہو چکا ہے ۔۔۔ لیکن زرداری نہ تو شہید ہے نہ ہی اس کا کوئی نعرہ زندہ ہے ۔۔۔بلاول کی صورت پی پی پی زندہ نہیں رہ سکتی ۔۔امین فہیم ، جہانگیر بدر جیسے لوگوں نے اسے زندہ رکھنا تھا ۔۔۔ جیو کے ایک اینکر کی جانب سے جہانگیربدر کی وفات پربعد از مرگ الزامات پر میڈیا کی گراوٹ کا اندازہ ہوا۔

سب سے پہلے ۔۔۔ سب سے تیز ۔۔۔ سب سے آگے کے چکر میں ہم انتہائی پستی کی جانب گرتے جا رہے ہیں ۔ ۔جنازوں میں جیب کا کٹنا ۔۔خواجہ سراﺅں تک پر زبردستی۔۔۔معصوم بچے بچیوں سے زیادتیاں ۔۔۔جعلی دوائیاں ۔۔۔ کھانے پینے کی اشیاءمیں ملاوٹ ۔۔۔گائے کے نام گدھے کے گوشت کی فروخت تو گویا ہمارے قومی کھیل بن چکے ہیں ۔میڈیا بھی اب کچھ یہی اثر پکڑ رہا ہے۔

دوستو ۔۔۔دنیا والے تو ایک بڑے چاند اور اس کی سائنسی توجیحات پر مصروف ِ گفتگو ہیں ۔۔۔پاکستانی اس چاند دکھائی کے موقع پر نہانے کے اثرات پر بحث کر رہے ہیں ۔۔ نواز شریف کو تو فل مون میں بھی راحیل شریف کی شبیہ دکھائی دے رہی ہو گی ۔۔۔ ہمیں تو ڈر یہ تھا کہ کہیں سی پیک کے تانے بانے بھی اسی چاند سے نہ جڑے ہوں ورنہ شریفوں نے اس کا بھی افتتاح کر دینا تھا ۔

شعرو سُخن کی دنیا کا ایک بڑا نام عابدہ کرامت خامشی سے ہم سے رخصت ہو گیا ۔۔۔ تقدیسِ ادب کینیڈا کے ادنی رکن ہونے کے ناطے اپنے رفقائے کار جناب آصف جامع اور وقار رئیس نے باہمی مشاورت سے ان کو خراجِ تحسین پیش کرنے کا بیڑہ اٹھا یا اور ادبی روایات کو برقرار رکھنے کی روایت برقرار رکھنے کی سعی کی ہے ۔

اقبال کے شاہینوں نے کینیڈا میں اپنی پرواز کا سفر بلندی کی جانب رواں رکھا اور شاعرِ مشرق کو منفرد انداز میں یاد کیا ۔۔پیٹر بھٹی جو کہ انٹرنیشنل مسیحی آرگنائزیشن سے وابستہ ہیں ۔۔علامہ سے محبت کا بھرپور ثبوت دیا ۔۔ بچوں نے نغمے بھی سنائے اور پینل مباحثہ بھی پیش کیا گیا ۔۔منتظمین قابلِ تحسین ہیں جو بے غرض ہو کر اپنے اکابرین کو یاد رکھتے ہیں ۔

اسی طرح مسلم ویلفئیر سینٹر نے بھی اپنے سالانہ پروگرام میں سینکڑوں افراد کو مدعو کرکے اپنی کارکردگی کی رپورٹ پیش کی ۔۔۔اندرونِ ٹورونٹو سے لے کر کینیڈا کے دور دراز علاقوں تک پھیلے ہوئے پروگرامز پر روشنی ڈالی اور ہم سب کے سر فخر سے بلند کر دیئے ۔۔۔آئی ڈی آر ایف ۔۔لیٹس ہیلپ مین کائنڈ اور اسلامک ریلیف جیسی تنظیموں کی معاونت سے ان کی فلاحی سرگرمیاں زور پکڑتی جا رہی ہیں ۔۔

عالمی واقعات میں ٹرمپ کا پتہ چل چکا ہے لیکن یہ وقت ہی ثابت کرے گا کہ یہ اصل ہے یا صرف ایک دھوکہ یعنی بلف ۔۔ مشرف صاحب نے بھی اپنی پارٹی کی نالائیقی سے بے زار ہو کر متحدہ کی بیساکھیوں کو چننے کا سوچ رکھا ہے ۔۔۔لیکن یہ خواب بھی اسی وقت پورا ہو گا جب تمام ہی اسٹیک ہولڈرز ایک صفحہ پر ہوں اور ہمارا مطلب ہے تمام ہی اسٹیک ہولڈرز۔

اُدھر ٹاک شوز میں اداکار رنگیلے کا کردار ادا کرنے والے رنگین مزاج پیشنگوئیاں کرنے والے شیخ رشید آجکل حسین حقانی کے پیچھے ہاتھ دھو کر پڑے ہوئے ہیں ۔۔ہم نے انہیں ٹوئیٹ کرکے مشورہ بھی دے ڈالا ہے کہ جناب آپ سرکاری طور پر کیوں نہیں آئی ایس پی آر میں بھرتی ہوجاتے ہیں ۔۔پھر جو دل میں آئے فرما دیجئے گا ۔

کینیڈا کی کنزرویٹو پارٹی کے امیدواروں کی اندرونی طور پر نامزدگی کے مراحل آجکل زور و شور سے جاری ہیں ۔۔۔ہمارے کرم فرما مظہر شفیق ایک پارٹی میں ملے تو چھوٹتے ہی پوچھنے لگے کہ ”آپ نے کسی امیدوار کا انٹرویو کیا کہ نہیں ؟ “ ہم ہنس دیئے ۔۔ ہم چپ رہے ۔۔ منظور تھا پردہ ترا ۔۔۔باقی آپ خود سمجھدار ہیں !

آخر میں ایک افسوسناک واقعہ جس کا شروع میں اشارہ بھی دیا تھا کہ ہمارے شہر ٹورونٹو کے معروف عالم محترم یوسف پٹیل صاحب کی اہلیہ ایک حادثے میں جاں بحق ہو گئیں ۔۔۔ انا لاللہِ وا نا الیہ راجعون ۔۔لمحہ فکریہ ہے کہ ہم سڑک پار کرتے وقت تو پوری احتیاط کرتے ہیں لیکن کچھ ڈرائیور اندھے ہوتے ہیں ۔

 کچھ رات کا اندھیرا۔۔ کالی سڑک اور پھر اس پر کالا برقعہ ۔۔ کسے الزام دیں ۔ ۔۔ ایک خاندان سے ماں کا سایہ چھن گیا ۔۔سب کو احتیاط کی ضرورت ہے ۔۔۔غم خانہ جہاں میں وقعت ہی کیا ہماری ۔۔۔اک نا شنیدہ اُف ہیں ۔۔ اک آہ بے اثر ہیں۔




Leave a Reply