687154-hockeyteamnew-1482352516-485-640x480

ہاکی، دورۂ نیوزی لینڈ اور آسٹریلیا کے لیے سلیکٹرز کو خصوصی ٹاسک مل گیا

687154-hockeyteamnew-1482352516-485-640x480قومی ڈپارٹمنٹل ہاکی چیمپئن شپ کے دوران سلیکٹرزکوخصوصی ٹاسک مل گیا، رشید جونیئر کی سربراہی پر مشتمل سلیکشن کمیٹی کو پی ایچ ایف حکام کی طرف سے خصوصی طور پرکھلاڑیوں کی فٹنس اورکھیل کا جائزہ لینے اور قومی ٹیم کے دورۂ نیوزی لینڈ اورآسٹریلیا سمیت انٹرنیشنل ایونٹس کے لیے ابتدائی فہرستیں تیارکرنے کی ہدایت دی گئی ہے۔
ذرائع کے مطابق سلیکٹرز سے کہا گیا کہ وہ چیمپئن شپ کا حصہ نہ بننے والوں کے بجائے انہی کھلاڑیوں کوترجیح دیں جن کی فٹنس اور غیرمعمولی کارکردگی ان کومتاثرکرے، سلیکشن کمیٹی ذرائع نے اس بات کی تصدیق کی کہ ہمیں قومی چیمپئن شپ کے دوران اچھے کھلاڑیوں کا چناؤکرنے کا کہا گیا ہے، ہم سب کے کھیل کا باریک بینی سے جائزہ لیں گے، خوش آئند بات یہ ہے کہ ہیڈ کوچ بھی اس کام میں ہماری معاونت کریں گے، اگر ضرورت پڑی توسیکریٹری فیڈریشن سے بھی مشاورت کی جائیگی۔
ذرائع کے مطابق انٹرنیشنل ایونٹس کے کیمپ کے لیے32 سے35 کھلاڑیوں کا انتخاب ہوگا، مزید معلوم ہوا ہے کہ 23 دسمبر سے شروع ہو کر 3 جنوری تک جاری رہنے والے قومی ایونٹ میں مجموعی طور پر 14 ٹیموں نے شرکت کی تصدیق کردی ہے، ان ٹیموں میں آرمی، نیوی، پی اے ایف، پی آئی اے، اسٹیل ملز، پورٹ قاسم، نیشنل بینک، سوئی گیس،کسٹمز، پاکستان ریلویز، پولیس، واپڈا، پی ٹی وی اور ایچ ای سی شامل ہیں۔
ادھرچیمپئن شپ کے لیے مختلف کمیٹیاں بھی تشکیل دی گئی ہیں، محکمہ جاتی چیمپئن شپ کے ٹورنامنٹ ڈائریکٹر مسعود الرحمن ہوں گے، انصر محمود جوڑا، شاہد حمید اورخالد منیر کواسسٹنٹ ٹورنامنٹ ڈائریکٹر بنایاگیا ہے، ڈسلپنری اینڈ اسکروٹنی کمیٹی کے کنوینر نوید عالم اولمپئن ہوں گے جبکہ ارکان میں عاطف بشیر اورعلیم رضا شامل ہیں، سید ذوالفقارعلی شاہ امپائر منیجر جبکہ منورحسین، محمد اصغر اور رضیہ رضوی اسٹنٹ امپائر منیجر ہوں گی۔ حیدر رسول، فیصل ، انوار حسین اور رانا ساجد سمیت 22 کے قریب امپائرز اور 32 ٹیکنیکل آفیشلز بھی ایونٹ کے دوران فرائض انجام دیں گے، چیمپئن شپ کے حوالے سے ٹیم منیجرز میٹنگ جمعرات کو رکھی گئی ہے جس میں ڈراز نکالے جانے کے ساتھ آفیشلزکو ایونٹ کے قوانین کے بارے میں بھی بریفنگ دی جائے گی۔
قومی چیمپئن شپ کے دوران امپائرنگ اورکوچزکورسز بھی کرانے جانے کی تجویزہے،کسی بھی ناخوشگوار واقعہ سے بچنے کے لیے سیکیورٹی کے سخت انتظامات کیے گئے ہیں، اس ضمن میں سی سی پی اولاہور سے خصوصی میٹنگ کے بعد پولیس کی مخصوص نفری تعینات کرنے کے علاوہ پنجاب اسپورٹس بورڈ کے گارڈز کی خدمات بھی حاصل کی جائیں گی۔ ہر آنے جانے والے کو جامہ تلاشی کے بعد نیشنل ہاکی اسٹیڈیم میں داخلے کی اجازت ہوگی، نشتر اسپورٹس کمپلیکس میں جگہ جگہ نصب کیے گئے خفیہ کیمروں کے ذریعے بھی خصوصی نگرانی کی جائیگی۔ مزید معلوم ہوا ہے کہ چیمپئن شپ میں شریک ٹیمیں توشہر بھرکے مختلف ہوٹلوں میں قیام کریں گی تاہم ٹیکنیکل آفیشلزکی رہائش کا انتظام خصوصی طور پر نیشنل ہاکی اسٹیڈیم میں ہی کیا گیا ہے۔




Leave a Reply