بھارت میں پولیس افسران نے نیپالی لڑکی کو 100 بار درندگی کا نشانہ بناڈالا

766520-rapeviolencewomen-1489653546-663-640x480ممبئی: ممبئی ہائی کورٹ کی دو رکنی بنچ نے پونے پولیس کو حکم دیا ہے کہ وہ اجتماعی زیادتی کا نشانہ بننے والی 16 سالہ نیپالی لڑکی اور اس کی دیکھ بھال پر مامور 24 سالہ ماڈل گرل کو فی الفور تلاش کرکے عدالت کے سامنے پیش کرے۔
گزشتہ سال مارچ میں دہلی کی وکیل انوجا کپور نے ممبئی ہائی کورٹ میں درخواست دائر کی جس میں کہا گیا کہ ان کی 16 سالہ مؤکلہ کو 2015 میں ملازمت کا جھانسا دے کرنیپال سے پونے لایا گیا لیکن وہاں ملازمت دینے کے بجائے پولیس والوں سمیت 100 سے زائد افراد نے اسے زیادتی کا نشانہ بناڈالا اور جسم فروشی پر مجبور کیا۔
مقامی سماجی کارکنان کی مدد سے پچھلے سال اس لڑکی کو بازیاب کروالیا گیا لیکن پونے پولیس نے ایف آئی آر درج کرنے سے انکار کردیا جس کے بعد اسے دہلی پہنچایا گیا جہاں دہلی پولیس ہیڈکوارٹرز میں اس مقدمے کی خصوصی ایف آئی آر درج کی گئی جس میں پونے پولیس کے بعض اعلی افسران بھی نامزد کیے گئے۔




Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *