شمالی کوریا کے خلاف فوجی کارروائی کر سکتے ہیں، امریکی وزیر خارجہ

768086-reztellirson-1489789897-136-640x480سیئول / ٹوکیو / واشنگٹن: امریکی وزیر خارجہ ریکس ٹلرسن گزشتہ روز شمالی اور جنوبی کوریا کے درمیان غیرفوجی علاقہ میں پہنچ گئے۔
امریکی وزیر خارجہ نے کہا کہ صبر کا پیمانہ لبریز ہو چکا، شمالی کوریا کے خلاف فوجی کارروائی بھی ایک آپشن ہے یعنی ضرورت پڑنے پر فوجی کارروائی بھی کی جا سکتی ہے۔ اسٹرٹیجک برداشت کی پالیسی کا خاتمہ ہو چکا اور امریکا اب سفارتی، سیکیورٹی اور اقتصادی اقدامات جیسے نئے پہلوؤں پر غور کر رہا ہے۔ شمالی کوریا نے حالیہ مہینوں میں میزائل اور جوہری ہتھیاروں کے تجربات کیے ہیں جس سے خطے میں کشیدگی ہے۔ اگر شمالی کوریا اپنے ہتھیاروں کے پروگرام کی دھمکی کو اس سطح پر بڑھا دیتے ہیں کہ ہمیں لگتا ہے کہ کارروائی کی ضرورت ہے تو پھر وہ آپشن بھی زیرغور ہے۔
ریکس ٹیلرسن نے جنوبی کورین اپنے ہم منصب یون بائی یو نگ کے ساتھ مشترکہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ شمالی کوریا موجودہ جنگی قوت اور ہتھیاروں کی موجودہ ٹیکنالوجی شمالی کوریا کی جنگی استعداد کار میں اضافہ کر رہا ہے جو کہ حقیقی معنوں میں خطرے کا باعث بن سکتی ہے۔ گزشتہ 20 برسوں سے عالمی برادری کی شمالی کوریا کو جوہری ہتھیار سازی کا سلسلہ ختم کرنے کی کوششوں سے کوئی حوصلہ افزا نتیجہ برآمد نہیں ہوا ہے۔




Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *