میٹرک امتحانات؛ سندھی کا پرچہ آؤٹ، ہرشہرمیں نقل کا بازارگرم

776592-copy-1490683950-443-640x480 (1)لاڑکانہ: سندھ میں نقل مافیا نے پہلے پیپر میں ہی بورڈ حکام اورانتظامیہ کو چاروں شانے چت کردیا جہاں سکھر، لاڑکانہ، گھوٹکی، شکارپور میں پرچے آؤٹ ہوگئے۔
ایکسپریس نیوزکے مطابق سندھ میں میٹرک کے پہلے ہی پیپرمیں انتظامیہ کے نقل روکنے کے تمام دعوے بے نقاب ہوگئے۔ لاڑکانہ بورڈ کی جانب سے 5 اضلاع ميں 135 امتحانی مراکز قائم کیے گئے ہیں جہاں مجموعی طورپر81 ہزار957 طلبہ و طالبات امتحانات ميں حصہ لے رہے ہیں۔ نقل کی روک تھام کیلیے 38 چھاپہ مار ٹیميں ٹیميں تشکیل دی گئی تھیں لیکن چھاپہ مار ٹیمیں اور نگران عملہ نقل مافیا کو روکنے میں بری طرح ناکام ہوگیا۔ لاڑکانہ میں نویں جماعت کا سندھی کا پرچہ آؤٹ ہوگیا، شہرمیں قائم فوٹواسٹیٹ کی دکانوں پرسندھی کا حل شدہ پیپر100 روپے ميں دستیاب تھا۔
سکھر ميں بھی ثانوی واعلیٰ ثانوی تعلیمی بورڈ سکھرکے زیراہتمام نویں اور دسویں جماعت کے سالانہ امتحانات شروع ہوئے، سکھر بورڈ کی جانب سے 211 امتحانی مراکز قائم کیے گئے ہیں۔ سکھر میں انگلش ون کا پرچہ 20 منٹ تاخیرسے شروع ہوا جب کہ چیکنگ کے باوجود طلبہ گائڈیں اورحل شدہ پرچے امتحانی مراکزکے اندرلے جانے میں کامیاب ہوگئے۔ شکارپورمیں بھی نویں جماعت کے سندھی کا پرچہ واٹس اپ کے ذریعے آؤٹ ہوگیا جب کہ ڈہرکی کے ضلع گھوٹکی کے چند مراکز میں انگلش ون کا پرچہ واٹس اپ کے ذریعے آؤٹ ہوا۔




Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *