اہم ترین خبریں
لاس اینجلس: ہالی ووڈ فلم ’’لالہ لینڈ‘‘ سے دنیا بھر میں مقبولیت حاصل کرنے والی خوبرو اداکارہ ایما اسٹون رواں سال سب سےزیادہ کمائی کرنے والی اداکارہ بن گئی ہیں۔ ہالی ووڈ کا شمار دنیا کی سب سے بڑی فلم انڈسٹریوں میں ہوتاہے،جہاں فلموں کے بجٹ سے لے کر اداکاروں کے معاوضے تک اربوں روپے کی سرمایہ کاری کی جاتی ہے تاہم گزشتہ کئی عرصے سےبالی ووڈ بھی ہالی ووڈ کوٹکر دینے لگا ہے اور بالی ووڈ اداکار بھی دنیا میں سب سے زیادہ معاوضہ حاصل کرنے والے اداکاروں کی فہرست میں شامل ہونے لگے ہیں ،جس کی مثال بالی ووڈ کی ڈمپل گرل دپیکا پڈوکون ہیں جو گزشتہ سال فوربز میگزین کی فہرست میں ٹاپ ٹین میں شامل ہونے میں کامیاب ہوگئی تھیں لیکن اس بار دپیکا کی قسمت نے ان کا ساتھ نہیں دیا اور دسویں نمبر پر تو کیا دپیکا میگزین کی فہرست سے ہی آؤٹ ہوگئیں۔ اس خبرکوبھی پڑھیں: دپیکا پڈوکون ایک اور ہالی ووڈ فلم میں کاسٹ
Search
796614-pakind-1492551222-213-640x480

بھارت افغان مسئلے کاحل نہیں ہوسکتا، پاکستان کا امریکا کو پیغام

796614-pakind-1492551222-213-640x480اسلام آباد: پاکستان نے امریکا کو آگاہ کیا ہے کہ بھارت افغانستان کے مسئلے کا حل نہیں بلکہ بذات خود ایک مسئلہ ہے۔
وزارت خارجہ کے ذرائع کے مطابق یہ بات امریکی مشیر قومی سلامتی جنرل ایچ آر مک ماسٹرکو بتائی گئی ہے جو پیر کے روز چند گھنٹے کیلیے پاکستان کے دورے پر آئے تھے اور وزیراعظم نوازشریف، مشیر خارجہ سرتاج عزیز، مشیر قومی سلامتی ناصر خان جنجوعہ اور چیف آف آرمی اسٹاف جنرل قمر جاویدباجوہ سے ملاقاتیں کی تھیں۔ ذرائع کے مطابق پاکستان کی جانب سے واضح کیا گیاکہ وہ خطے بالخصوص افغانستان میں استحکام کیلیے امریکا کیساتھ کام کرنا چاہتا ہے مگر انھیں اس امر سے بھی آگاہ کیا گیا کہ اگر امریکا یہ سمجھتا ہے کہ بھارت افغانستان کے مسئلے کا حل ہوسکتا ہے تو وہ غلطی پر ہے کیونکہ پاکستان سمجھتا ہے کہ بھارت افغان حکومت کو کنٹرول کرنا چاہتا ہے اور پاکستان کے افغانستان کیساتھ سفارتی تعلقات میں مسائل پیدا کررہا ہے۔
پاکستان نے اپنے ان خدشات کا بھی اظہار کیا کہ بھارت پاکستان میں دہشت گردی کرنیوالے گروپوں کی معاونت کررہا ہے۔ پاکستان نے امریکی مشیر کو اس بات سے بھی آگاہ کیاکہ پاکستان موثر بارڈرکنٹرول سسٹم کیلیے سرحد پر باڑ لگارہا ہے۔ پاکستان کا دعویٰ ہے کہ امریکا نے اس حوالے سے مثبت تاثر ظاہرکیا ہے۔ پاکستان نے اس عزم کا اعادہ کیا کہ دہشت گردوں کیخلاف بلاامتیاز کارروائی کی جارہی ہے اور کوئی بھی گروپ ایسا نہیں جسے نشانہ نہ بنایا گیا ہو۔ پاکستان نے اس موقف کا بھی اظہارکیا کہ ملک میں داعش کا کوئی منظم ڈھانچہ موجود نہیں تاہم وہ داعش کے خطرے کے خاتمے کیلیے عالمی طاقتوں کیساتھ تعاون کریگا۔




Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *