کاٹن سیزن 2016-17 روئی کی پیداوار9.8 فیصد بڑھ کر1.07 کروڑ گانٹھ تک پہنچ گئی

796559-cottonPHOTOFILE-1492548160-688-640x480کراچی / ملتان: کاٹن سیزن 2016-17 ختم ہوگیا، ملک میں روئی کی پیداوار9.81 فیصد کے اضافے سے 1 کروڑ 7 لاکھ 27 ہزار 182 گانٹھ رہی۔ پاکستان کاٹن جنرز ایسوسی ایشن (پی سی جی اے) نے کپاس کی فیکٹریوں میں آمد کے حتمی اعداد و شمار جاری کر دیے۔
15 اپریل 2017ء تک ملک کی جننگ فیکٹریوں میں 9 لاکھ 58 ہزار 739 گانٹھ کپاس زیادہ آئی، 15 اپریل 2016 تک کپاس کی پیداوار 97 لاکھ 68 ہزار 443 گانٹھ رہی تھی، صوبہ پنجاب کی فیکٹریوں میں 69 لاکھ 40 ہزار 71 گانٹھ کپاس آئی جو گزشتہ سال کی اسی مدت میں 60 لاکھ 2 ہزار 406 گانٹھ پیداوار سے9لاکھ 37ہزار 665 بیلز یا15.62فیصد زیادہ ہے، سندھ میں پیداوار0.56 فیصد بڑھ کر 37 لاکھ 87 ہزار 111 گانٹھ رہی جو گزشتہ سال 37 لاکھ 66 ہزار73 بیلز رہی تھی، 15 اپریل 2017 تک فیکٹریوں میں آنے والی کپاس سے 1 کروڑ7 لاکھ 25 ہزار 980 گانٹھ روئی تیار کی گئی۔
سیزن میںایکسپورٹرز نے 2 لاکھ 2 ہزار 356 گانٹھ روئی خریدی جبکہ گزشتہ سال3 لاکھ 62 ہزار141 بیلز خریدی تھیں، ٹیکسٹائل سیکٹر نے گزشتہ سال کی 90 لاکھ 56 ہزار526 گانٹھوں کے مقابلے میں رواں سال 1 کروڑ 2 لاکھ 59 ہزار 229 گانٹھ روئی خریدی جبکہ جنرز کے پاس 2 لاکھ 65 ہزار597 گانٹھ کپاس و روئی کا غیر فروخت شدہ اسٹاک موجود ہے جبکہ گزشتہ سال اس مدت میں3لاکھ 49ہزار 776 بیلز کا اسٹاک موجود تھا۔




Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *