آئندہ بجٹ میں حکومت کا زرعی انشورنس پریمیئم سبسڈی جاری رکھنے کا فیصلہ

803740-agriculturereuter-1493265314-652-640x480 (1)وفاقی حکومت نے آئندہ مالی سال 2017-18 کے وفاقی بجٹ میں بھی بجٹری سپورٹ کے تحت چھوٹے کاشتکاروں کو 5 بڑی فصلوں اور لائیواسٹاک کے لیے لون انشورنس پریمیئم سبسڈی کی ادائیگی جاری رکھنے کا فیصلہ کیاہے۔
اسٹیٹ بینک آف پاکستان (ایس بی پی)کی تجویز پرآئندہ مالی سال2017-18 کے وفاقی بجٹ میں 5 بڑی فصلوں اور لائیواسٹاک کے لیے قرضوں کے انشورنس پریمئم سبسڈی کے لیے 2 ارب روپے سے زائد کے فنڈز مختص کیے جارہے ہیں۔ اس ضمن میں ’’ایکسپریس‘‘ کو دستیاب دستاویز کے مطابق آئندہ مالی سال کے دوران چھوٹے کاشتکاروں کوکراپ لون انشورنس پریمیئم سبسڈی کی ادائیگی کے لیے ڈیڑھ ارب روپے جبکہ لائیواسٹاک لون انشورنس پریمیئم سبسڈی کی ادائیگی کے لیے 50 کروڑ روپے کی بجٹری سپورٹ کی مد میں فراہم کیے جائیں گے۔
دستاویز میں بتایا گیا ہے کہ وفاقی حکومت کی جانب سے کاشتکاروں کو تحفظ فراہم کرنے کے لیے 2008 میں کراپ لون انشورنس اسکیم متعارف کروائی گئی تھی اور موجودہ حکومت نے مالی سال 2014-15 میں کراپ لون انشورنس اسکیم کا دائرہ کار وسیع کرتے ہوئے اسے25 ایکڑ تک زرعی اراضی رکھنے والے کاشتکاروں کو بھی اس اسکیم کے تحت فصلوںکے لیے لون انشورنس پریمیئم کے اہل قراردیا گیا ہے۔




Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *