805314-nationalassembly-1493439239-556-640x480

بجٹ میں پاکستان انفرااسٹرکچر بینک کے قیام کا اعلان متوقع

805314-nationalassembly-1493439239-556-640x480وفاقی حکومت کی جانب سے آئندہ مالی سال کے بجٹ میں پاکستان انفرااسٹرکچربینک کے قیام کا باضابطہ اعلان متوقع ہے جس کا پیڈ اپ کیپٹل 1 ارب ڈالر کے لگ بھگ ہوگا، اس بینک کے قیام کے سلسلے میں پاکستان ڈیولپمنٹ فنڈ (پی ڈی ایف) کے فنڈز کواستعمال کرنے کا اصولی فیصلہ کیاگیا ہے تاہم امکان ہے کہ یہ استعمال تکنیکی معاونت کے لیے ہوگا۔
’ایکسپریس‘ کو دستیاب دستاویز کے مطابق پاکستان میں انفرااسٹرکچر ڈیولپمنٹ کی بہت زیادہ ڈیمانڈ ہے، عالمی بینک کی جانب سے کرائی جانے والی اسٹڈی رپورٹ میں بھی اس بات کی نشاندہی کی جا چکی ہے جس میں کہا گیاکہ پاکستان کو 2020 تک اپنی جی ڈی پی کا 10فیصد حصہ انفرااسٹرکچر ڈیولپمنٹ کے منصوبوں پر خرچ کرنا ہوگا۔
دوسری جانب حکومت نے محدود مالی وسائل کے پیش نظر انفرااسٹرکچر کی بھاری ڈیمانڈ پوری کرنے کے لیے نجی شعبے کی سرمایہ کاری کو فروغ دینے کی منصوبہ بندی کررہی ہے تاہم بینکوں کے اثاثہ جات اور واجبات کے مس میچ مسائل ہیں اور ان کے زیادہ تر ڈپازٹس قلیل مدتی ہیں جبکہ انفرااسٹرکچر ڈیولپمنٹ منصوبوں کے لیے طویل المیعاد فنانسنگ کی ضرورت ہوتی ہے کیونکہ ان پروجیکٹس کو مکمل ہونے میں وقت لگتا ہے، بہت سے ممالک نے انفرااسٹرکچر منصوبوں کی فنانسنگ کے لیے قومی ادارے قائم کیے ہیں اورپبلک پرائیویٹ پارٹنرشپ کے تحت اپنے کمرشل بینکوں کو مناسب کریڈٹ انہاسمنٹ تکنیکس کے ذریعے انفرااسٹرکچرمنصوبوں کی فنانسنگ کے لیے استعمال میں لایا گیا ہے۔




Leave a Reply