820009-mishal-1495002505-493-640x480

مشال خان قتل کیس میں جے آئی ٹی قانون کے تمام تقاضے پورے کرے، سپریم کورٹ

سپریم کورٹ نے مشال خان قتل کیس کی تحقیقات کرنے والی جے آئی ٹی کو قانون کے تمام تقاضے پورے کرنے کا حکم دے دیا ہے۔
ایکسپریس نیوزکے مطابق سپریم کورٹ میں چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس میاں ثاقب نثار کی سربراہی میں تین رکنی بینچ نے مشال خان قتل ازخود نوٹس کیس کی سماعت کی، سماعت کے دوران سرکاری وکیل نے موقف اختیارکیا کہ 57 میں سے 53 ملزمان گرفتار کرلئےگئے، 49 ملزمان جوڈیشل اور 4 ملزمان جسمانی ریمانڈ پر ہیں، مرکزی ملزم عمران کو بھی گرفتارکر لیا جس نے مشال کو گولیاں مارنے کا اعتراف کرلیا ہے، 6 گواہان کا بیان ریکارڈ کرلیا جب کہ عبوری چالان جمع بھی کرادیا ہے۔
چیف جسٹس نے اپنے ریمارکس میں کہا کہ کیا عبوری چالان پر ٹرائل کورٹ فیصلہ کرسکتی ہے، کوشش کرکے تین ہفتے تک حتمی چالان جمع کروا دیں، اسلامی معاشرے میں ایسے رویوں کی گنجائش نہیں جب کہ جے آئی ٹی قانون کے تمام تقاضے پورے کرے۔ چیف جسٹس نے ریمارکس میں کہا کہ اب تک یونیورسٹی انتظامیہ کے کردار کا تعین کیوں نہ ہوسکا جب کہ عدالت نے ملزمان کے اعترافی بیان کے ساتھ شواہد اکٹھے کرنے کا حکم دے دیا۔




Leave a Reply