ہوم / امریکا سے / کیسے ایک افریقن-امریکن خاتون نے سربراہ کے طور پراپنے ٹیکنالوجی اسٹارٹ اپ کے لئے چھ لاکھ ڈالر مالی امداد حاصل کی

کیسے ایک افریقن-امریکن خاتون نے سربراہ کے طور پراپنے ٹیکنالوجی اسٹارٹ اپ کے لئے چھ لاکھ ڈالر مالی امداد حاصل کی

کاینرس اینکارپویٹڈ پہلامعاشرتی انٹرپرائز ٹیکنالوجی پلیٹ فارم ہے اس ٹیکنالوجی پلیٹ فارم کی بنیاد "تعلق کا احساس”ہے۔
کاینرس اینکارپویٹڈ کی شریک بانی کی کہانی،اُن کی زبانی

سوبلین ڈالرز میں سے تقریباً0.2فیصد افیریقن-امریکن خواتین ، جو ایک نیا بزنس یا کام شروع کرنا چاہتی ہیں،کومالی امدا د کے طور پرحاصل کر پاتی ہیں جو ان کے لئے ایک اچھا یا بڑا کاروبار کرنے کے لئے کافی نہیں ہے۔تاہم کاینرس اینکارپویٹڈ جو کہ پہلامعاشرتی انٹرپرائز ٹیکنالوجی پلیٹ فارم ہے، جس کا مقصدکمپنیز اور اُن کے ملازمین کے درمیان متنوع ،مساوات اور شمولیت(DEI) میںکام کی جگہ پر تعاون کو فروغ دینا ہے،نے اپنے پہلے مالی امداد کی کوشش ، جو اس ماہ ختم ہوئی ہے، میں پانچ لاکھ اور پچھتر ہزار ڈالر حاصل کرنے میں کامیاب ہوا ہے۔
کاینرس کے بانی مینڈی پرائس اور سٹار کارٹر ہیں جو کہ کاینرس کے چیف آپریٹینگ آفیسربھی ہیںجو ہارورڈ لاءاسکول میں اکٹھے پڑتے تھے ۔اُنہوں نے اپنے کیرئیر©”کارپوریٹ قانونی مشیر”کو چھوڑکر "تعلق کا احساس”پر کام کرنا شروع کیا۔ "تعلق کا احساس”ایک تحقیق ہے جس کے مطابق ہر کام کرنے والا اپنے کام میںمزید بہتری دکھا سکتا ہے۔تحققیق سے یہ بات واضح ہوتی ہے کہ ایسے ملازمین جن کی واضح نمائندگی نہیں ہے، اُن میں سے 30فیصدسے بھی کم، اپنے کام کرنے کی جگہ سے اپنے تعلق کو، اپنے خیالات کو بیان کرتے ہیںجس کی وجہ سے کمپنیز کوملازمین کے چھوڑنے، نکالنے ، بیمار ہونے ، ریٹائر ہونے کی وجہ سے سالانہ 144,000ڈالر فی ملازم تک کا خرچہ اُٹھانا پڑتا ہے ۔
"ہم کاینرس کے ذریعے ان اعداد و شمار اور کام کرنے کی جگہ کے ماحول کو بدلنا چاہتے ہیں”کارٹر نے کہا©”کمپنی اپنے مخصوص ڈیٹا پر انحصار کرے نا کہ صرف آن لائن سروے یا چھٹی حس پر، ادارے کاینرس کے استعمال کے ذریعے معلومات اور حکمت عملی پر مشتمل فیصلے کر سکیںجن کے ذریعے کام کی جگہ پر انصاف اور مساوات کے متعلقہ مسائل حل ہو سکیںگے”
کاینرس پلیٹ فارم آج اُن اداروں کے لئے شروع ہو گیاجنہوں نے ابتدائی طور پراس کااستعمال شروع کیا ہے، جس سے ان اداروں کے ملازمین بغیر سامنے آئے اپنے ا©©دارے کی درجہ بندی،نظر ثانی جائزہ اوررائے بابتDEIدے سکیں گے جس سے کمپنیز کوآنے والے ممکنہ مسائل کے حل میں مدد ملے گی۔ملازمین اپنی کمپنی کی درجہ بندی 5اہم پیمائش کے معیاروں پر کر سکیں گے اور بعد میںDEIکومد نظر رکھتے ہوئے بنائے گئے سوالات کے جوابات دیں گے جن کو بنانے میں مصنوعی ذہانت اور مشین لرننگ ٹیکنالوجیز کا استعمال کیاجائے گا۔کارپوریٹ ادارے جو ابتدائی طور پر اس پروگرام میں شامل ہیں اُن کا تجزیاتی ڈیٹا ،جو کہ نظر ثانی جائزہ اور سروے پر مشتمل ہو گا، کمپنی ڈیش بورڈ کے ذریعے دستیاب ہو گا۔ اور جس کے ذریعے کمپنی کے رہنماء براہ راست ملازمین کی رائے کی بنیاد پر مشتمل معلومات پرفیصلے کر سکیں گے کہ کس طرح کمپنی کا ماحول بہتر بنایا جا سکتا ہے۔
ڈومینیک فلُکرنے شریک بانی مینڈی پرائس سے بات کی کیسے وہ ایک کامیاب وکیل سے ایک ٹیکنالوجی سے متعلقہ کاروباری بنیں اور کام کی جگہ کی متنوع اور شمولیت کے لئے کاینرس کیوں اہم ہے۔
فلُکر: اپنے کیرئیر کے متعلق بتائیں اور کیوں آپ ایک کامیاب وکیل سے کاینرس کی شریک بانی اور سی ای او بنیں؟
پرائس: میرا ایک کارپوریٹ وکیل کے طور پر کام کرنا ہی کاینرس بنانے کے خیال کی بنیاد بنا۔ ایک افریقن -امریکن خاتون وکیل ہوتے ہوئے مجھے جن چیزوں کا شروع میں سامنا کرنا پڑا ان میں سے تنوع اور شمولیت کی کمی پہلی تھیں۔میں نے ہر وہ چیز حاصل کی اپنے پروفیشنل کیرئیر میں جو مجھے حاصل کرنی چاہیے تھی، میں ایک اعلٰی اور آیوی لیگ لاءکالج میں پڑھی۔ایک بہترین لاءفرم کے چوٹی کے وکلاءمیں شمارہوئی۔ اور کئی اعزازت اپنے نام کئے لیکن پھر بھی کئی دفعہ مجھے ایسا محسوس ہوا کہ جیسے میںغیر ہوں۔مجھے ایک موقع یاد ہے کہ میں ایک کلائنٹ کے ساتھ میٹینگ میں تھی جب میرے ایک ساتھی نے مجھے فرم کاایک "مختلف”شراکت کا ر قرار دیا۔اُسی لمحے مجھے یہ احساس ہوا کہ مجھے نہ ٹیم کا ایک مکمل ممبر شماریا تسلیم کیا جاتا ہے بلکہ مجھے ایک ٹوکن کی طرح چھوٹا شمار کیا جاتا تھا۔
بارہ سال ایک وکیل کے طور پر کام کرنے کے بعد مجھے یہ حقیقت پتا چلی کہ میں کام کرنے کی جگہ کو ایک دفعہ اور ہمیشہ کے لئے بدلنا چاہتی ہوں۔ میں نے کاینرس کی مشترکہ بنیاد رکھی تا کہ کمپنیز کام کی جگہ میں ایسے ماحول کو پروان چڑھا سکیںجہاں ہر کوئی تعلق رکھتا ہو۔
فلُکر: کاینرس اینکارپویٹڈایک ٹیکنالوجی کمپنی ہے جو کہ ڈیٹا اور تجزیوں کو استعما ل کرکے کام کی جگہ پر تنوع اور شمولیت کے مسائل کوحل کرنا چاہتی ہے۔آپ نے کِس وجہ سے کاینرس کو شروع کیا؟
پرائس: میں نے اپنے کارپوریٹ کے تجربہ سے اور سینکڑوں دوسرے پروفیشنلزسے بات کر کے جن کو کوئی خاص نمائندگی حاصل نہیںتھی۔ میں نے دیکھا کہ اگرچہ امریکا کی کارپوریٹ دنیا میں متنوع کے لئے بہت سے اقدامات کئے گئے ہیں مگر وہ مجموعی صورتحال میں بہتری نہیں لا سکے۔ بلکہ ایک حالیہ تحقیق سے یہ سامنے آیا ہے کہ رنگ دار نسل میں 30فیصد سے بھی کم لوگوں نے اپنے کام کی جگہ سے تعلق کے احساس کو بیان کیا ہے۔یہ مسئلہ ملازمین اور کمپنیز دونوں کا ہے کیونکہ یہ وہ ملازمین ہیں جن کو کام چھوڑنا پڑتا ہے جس کی وجہ سے کمپنی کو تقریباًسالانہ144,000فی ملازم کا خرچ اُٹھانا پڑتا ہے۔
جیسے ہم نے کاینرس کو شروع کیا تو ہمیں پتا چلا کہ شمولیت کا ماحول خودبخود نہیں ہوتا بلکہ یہ ایک ارادی عمل ہے۔ اورجب ہم سب شمولیت اور مساوات کو اہمیت دیتے ہیں اور ساتھ ساتھ تنوع کو بھی تب ملازم بھی خود اس میں شامل ہوکر کمپنی کے لئے زیادہ پیداواری ہو جاتا ہے اور یوں کمپنی کے لئے زیادہ قیمتی ہو جاتا ہے، اور تحقیق بھی اس نتیجے کے حق میں ہے۔
فلُکر: ابھی حال ہی میں کاینرس نے اپنی پہلی مالی امداد کی کوشش میں5لاکھ 75ہزارڈالرز اکھٹے کئے ہیں ۔کمپنی اس امداد کوکس طرح استعمال کرنا چاہتی ہے؟
پرائس: ہمیں خوشی ہوئی ہے کہ ہم5لاکھ 75ہزارڈالرزکی امداد حاصل کر سکے ہیں جبکہ سو بلین ڈالرز میں سے افریقن-امریکن خواتین صرف0.2ہی حاصل کرپاتی ہیں۔ہم اس امداد کو استعمال کر رہے ہیں ایک ایسا ٹیکنالوجی پلیٹ فارم بنانے کے لئے جو امریکا کی بڑی یا چھوٹی کمپنیز میں تنوع کے اقدامات کا جزولاینفیک ہو گا اور ہم مزید ڈیٹا کے تجزیہ کار اور دوسرے ٹیم ممبران کو اپنے ساتھ شامل کر رہے ہیں تا کہ اس پلیٹ فارم کو توسیع دی جا سکے۔ہمارا پلیٹ فارم انتخاب شدہ کمپنی کے BETAصارفین کے لئے فروری کے شروع میں دستیاب ہو جائے گا۔
فلُکر: کاینرس کو کہ ایک معاشرتی کاروباری ٹیکنالوجی ہے وہ کس طرح کام کرتا ہے؟ اور کون کون سے تنوع اور شمولیت کے مسائل آپ کی کمپنی حل کرتی ہے؟
پرائس: ہمارے پلیٹ فارم کے مختلف حصے ہیں جو کہ دونوں ملازمین اور کارپوریٹ شراکت داروں کے لئے بنائے گئے ہیںجو باہمی تعاون کو فروغ دیتے ہیں اور اُن کی کام کی جگہ کو بہتر بنانے میں مدد دیتے ہیں۔کاینرس کی ویب سائیٹ پر ڈیش بورڈ موجود ہیں جو کمپنی کی مختلف پالیسیز کے ڈیٹا کے تجزیہ پر مشتمل ہوتے ہیں، جس میں تنوع کے اقدامات، زچگی کی چھٹیاں،کمپنی کی مراعات اور دوسرے موضوعات شامل ہیں۔ کمپنیز کی درجہ بندی تنوع، مساوات، اور شمولیت پر اُن کے مسابقین ،جواُسی انڈسٹری سے ہوتے ہیں، کہ حساب سے بھی کی جاتی ہے۔ملازمین اپنی کمپنی کو DEIکے پانچ ایریاز میں (تنوع،مساوات اور شمولیت) بغیر سامنے آئے درجہ بندی کر سکتے ہیں اور ساتھ ہی اپنی کمپنی کے متعلق سوالات کے ایک تسلسل کے جوابات دینے ہیںجوDEIپر مشتمل ہوں گے جن کو بنانے میں مصنوعی ذہانت اور مشین لرننگ کو استعمال کیا گیا ہے۔اس میں جو چیز خاص طور پر منفرد ہے وہ یہ ہے کہ ہم رجحانات اور آنے والے ممکنہ مسائل کوپہچان سکتے ہیں اور یہ معلومات اپنے کارپوریٹ شراکت داروں کو دیتے ہیں تا کہ وہ ان معلومات کی بنیاد پر ضروری تبدیلیاں کر سکیں اور اپنے کام کی جگہ پر تنوع اور شمولیت کو مزید فروغ دے سکیں۔
ہم اپنے کارپوریٹ کے ابتدائی شمولیت کاروں کے لئے فروری کے شروع میں BETAپروگرام کا آغاز کر رہے ہیں اور ہماری ویب سائیٹ قومی سطح پر اِن گرمیوں میں دستیاب ہو جائے گی۔ ہم چاہتے ہیں کہ آپ سب ہمارے نیوز لیٹر کو سائن اپ کر لیں تا کہ ہمیشہ تازہ ترین صورتحال سے آگاہ رہیں۔
فلُکر: اور کیا کچھ کرنے کی ضرورت ہے تا کہ کام کی جگہ پر تنوع اورشمولیت کا حصول ممکن بنایا جاسکے؟
پرائس: اگرچہ یہ ایک اچھی بات ہے کہ کام کی جگہ کو متنوع بنایا جائے لیکن ہمیں یہ تسلیم کرنا پڑے گا کہ تنوع صرف ہندسوں کا کھیل نہیںہے۔تنوع اور شمولیت مضبوط ہوتی ہیں جب کمپنی بات چیت اور باہمی تعاون کو تنظیم کی مختلف سطحوں پر فروغ دیتی ہے۔اور ساتھ ہی ملازمین کو بغیر رد عمل کے خوف کے اپنے خیالات کے بیان کرنے کی اجازت دیتی ہے۔پس منظر، نظریات اور ذاتی تجربات جوسب کو حاصل ہوتے ہیں سے اصل فائدہ اُٹھانے کے لئے لازمی ہے کہ ہم شمولیت کو ارادی طور پر اختیار کرنا چاہئے نا کہ صرف تنوع کے کامیابی کے نشان کے طور پر۔
فلُکر: آپ اگلے تین سے پانچ سالوں میں کاینرس کو کہاں دیکھ رہی ہیں؟
پرائس: جیسے ہمارا کام بڑھ رہا ہے، ہمیں اُمید ہے کہ ہم اپنی اندرونی ٹیم کو توسیع دیتے ہوئے اپنے صارفین کی منفردضروریات کو پورا کرتے رہیں۔ ساتھ ہی ہم چاہتے ہیں کہ ہم عالمی سطح پر بھی توسیع حاصل کریں کیونکہ ہمیں یقین ہیں کہ تنوع اور شمولیت کے مختلف تہذیبوں میں مختلف معنی ہو سکتے ہیں لیکن ایک ایسا ماحول بنانا ہے جہاں پر ہر کوئی "تعلق کے احساس”سے جڑا ہوا ہو ایک عالمگیر ضرورت ہے۔

Check Also

آغا سراج درانی کا جسمانی ریمانڈ، یکم مارچ تک نیب کے حوالے

کراچی: پیپلز پارٹی کی مشکلات میں اضافہ،   احتساب عدالت نے آمدن سے زائد اثاثوں …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے